عشق فراری، اقراری، مرتد بیٹی ہماری

تحریر:عبدالعظیم رحمانی، ملکاپوری
ریٹائرڈ صدر مدرس، ممبئی
9224599910

مسلم لڑکیوں کی غیر مسلم لڑکوں سے شادی کی ضد، کورٹ میریج، اسلام سے ارتداد ان کی شامت اعمال کا آغاز اور برے دنوں کی دستک ہے۔

جیتا ہے رومی، ہارا ہے رازی

پیار ہوتا نہیں ہو جاتا ہے۔ میں، میری آزادی اور میری مرضی۔ آزادی، ازادی آزادی ۔۔۔(1)بندھنوں سے آزادی-open relation
(2)حدود الله سے آزادی.
(3)دین اسلام سے فراری۔۔
یہ فرار کسی قید سے نہیں بلکہ اپنے آپ سے ہے۔
(1)ارتداد اسلام سے فرار ہی ہے۔اور وہ بھی اس لگثری فراری Luxury Ferrari میں بیٹھ کر ہوا میں اڑنا، آسمان کو چھونے کی لا حاصل کوشش کرنا ہے۔تمہارا یہ فرار کن کن سے ہے سوچوتو سہی۔۔۔۔

(2)مسلم لڑکیاں فرقہ پرستی اور اسلام مخالفین کے اکسانے اور ہر طرح کے ان کے وقتی سپورٹ سے ملت اسلامیہ کی ناک کٹا کر، نیچا دکھا کر ،مسلمانوں کی ذلت کاسبب بن رہی ہیں. وہ تیز رفتار اور مہنگی سواری میں بیٹھ کر، بے غیرتی کے پر لگا کر غیروں کی سازش کا الہ کار بن رہی ہیں۔
یہ انھیں کہیں کا نہ چھوڑے گا۔
(3)والدین اور ملت کے سمجھدار لوگوں کے سمجھانے کے باوجوردغیر مسلم شوہر کے ساتھ رہنے کی ضد تمھیں لے ڈوبے گی۔

ابھی عشق کے امتحاں اور بھی ہیں

(4)اس کا انجام جان لو ۔ان لڑکیوں کی درگت دیکھو! جنہوں نے ایسی ضد کی۔والدین سے تعلق توڑا ۔رشتے داروں اور سماج کو ٹھکرایا۔ بہن بھائیوں سے کٹ گئیں ۔سب سے ناطے توڑے۔۔۔۔انجام سامنے ہے۔ تمہاری حیثت کیا بنے گی!۔دوراندیشی سے سوچو ۔

شاخ نازک پہ جو بنے گا

وہ آشیاں ناپائیدار ہوگا

(5)تم جس کے پاس سب کو چھوڑ کر جارہی ہو اس کے دل میں الله کا خوف نہیں ۔رحم دلی ،ایثار مسلمان جیسا نہیں۔ رسم ورواج کی کوئی حدنہیں۔جو ایک خدا کے سامنے نہیں جھکتا وہ لاکھوں کی پرستش کرتا ہے۔ جسے مرنے کے بعد کچھ حساب کتاب کا کھٹکا نہیں ۔۔حرام حال، جائز ناجائز کی تمیز نہیں!

جس کے دم پر گھر سے نکلی، جب وہ دے گا فریب

سوچ لو کس سمت تم پاؤں بھاری جاؤ گی

اسلام میں اپنے مقام کو دیکھو۔ اپنی قدر وقیمت پہچانو۔۔۔۔۔

(1)عصمت وعفت پاک دامنی۔
(2)گھر میں تمہارے پیروں تلے جنت۔
(3) والد اور شوہر کی وراثت میں حق۔
(4)حجاب کی حفاظت میں والد اور غیور بھائیوں کی عفت مآب بہن،بیٹی۔جو شادی سے پہلے اس کی ساری ضروریات کو گھر میں رکھ کر پورا کرنے والے افراد ہیں ۔ شادی کے بعد ناچاکی اقر تنازعات میں زندگی بھر ضرورت پوری کرنے والے ہیں ۔ایسے رشتوں کو ٹھکرا کر غیر مسلم کے عشق میں دیوانی ضدی بیٹی! کل جب تمہاری آنکھوں سے پٹی کھلے گی اس وقت قوم اور والدین کی گردن جھکانے والی فراری بیٹی، بہر دیر ہو چکی ہوگی۔۔۔۔۔
(5)بیوگی اور علحیدگی کے بعد اپنی مرضی سے دو بارہ شادی کرنے کا حق تمہیں حاصل ہے۔ یہ حق تمہیں اور کہاں ملے گا؟؟؟
(6) شوہر کی دو بیو یاں بھی ہوں تب بھی عدل وانصاف کے ساتھ تمہارے حقوق تمہیں ملتے رہیں گے -تم داشتہ یا رکھیل بن کر بے عزتی سے نا جیو گی۔حق رکھنے والی بیوی ہوگی۔
(7)آپ کی اولاد بھی آپ کو اپنی ماں کا پورا پورا حق اور عزت وتکریم دےگی۔

(8)زندہ جلائ نہ جاؤ گی. مر کر بھی جلائی نہ جاؤ گی۔زمین کے پردے میں دفن ہوگی۔تمہارے لیے نماز جنازہ اور مغفرت کی دعائیں ہوں گی۔

(9)بے پردگی سے بچو گی. حجاب کے حصار اور عفت کے قلعے میں محفوظ رہو گی۔
(10) یہاں برکت ہے، ایک کماتا دس کھاتے ہیں، عورتوں کو ملازمت کرنی نہیں پڑتی۔کبھی مسلم عورت کو رکشہ ڈرائیور دیکھا تم نے؟؟؟
(11)مرد چار دیواری میں رکھ کر حقوق پورے کرتا ہے۔ خود دھوپ میں جلتا تمہیں چھاؤں میں رکھتا ہے. تمہیں گھر کی ملکہ بنا کر رکھتا ہے ۔

آہ دوذخ کو خریدا تم نے ایماں بیچ کر

(1)جوانی کے جوش میں تھوڑی سی وقتی آسائش اپنی مرضی، مزے اور شوق کے لیےتم کیسے کٹھورفیصلے لے رہی ہو؟
(2)کس کس کو ٹھکرارہی ہو؟ مذہب، عقیدہ، پیدا کرکے پرورش اور تعلیم دلانے والے ماں باپ، خاندان، بھائی، بہنیں سیکڑوں رشتے ناطے؟ معاشرہ کی نیک نامی ۔
(3)تمہارے بطن سے پیدا اولاد شرک کرے گی تو گنہگار تم نہیں ہوگی کیا؟؟
(4) زرا سوچو تو سہی! اپنے خاندان کا نام، بھائیوں کی حمیت، غیرت اور نسبت چھوڑ کر جانے سے تمہیں ذلت، رسوائی اور دربدری اور طعنے مل سکتے ہیں ۔؟؟ اور خاندان کو بدنامی اور بعد کی بہنوں کے رشتے میں رکاوٹ ۔؟؟

جس گھڑی دل بھر گیا کوٹھے پہ بیچیں گے تمہیں

داغ لے کر ہوگی واپس اور کنواری جاؤ گی

پلٹو اپنے رب کی طرف اس سے مدد چاہو،مغفرت چاہو،دعا کرو اپنے رب سے ،اس نے بغیر جوڑے کے تمہیں پیدا نہیں کیا۔بس کچھ وقت کی آزمائش ہے ۔دیر ہے اندھیر نہیں

جس علم کی تاثیر سے زن ہوتی ہے نازن

کہتے ہیں اسی علم کو ارباب نظر موت

بیگانہ رہے دین سے گر مدرسہء زن

ہے عشق ومحبت کےلیے علم وہنر موت

عبدالعظیم رحمانی ملکاپوری
9224599910

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے