جامعہ صفیہ للبنات میں دعائیہ نشست کا اہتمام

قنوج: 7جنوری
مدرسہ جامعہ صفیہ للبنات کی نئی عمارت کے افتتاح کے موقع پر ایک دعائیہ نشست کا انعقاد کیا گیا جس میں حضرت محی السنّہ رحمۃ اللہ علیہ کے خلیفہ مولانا افضال الرحمن قاسمی نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی،
واضح ہو جامعہ کا تعلیمی نظام اب تک مولانا محمد شمعون مظاہری کے مکان میں جاری تھا، محلہ احمدی ٹولہ میں جامعہ کی نئی عمارت زیر تعمیر تھی عمارت کی تکمیل کے بعد اب باضابطہ طالبات کا تدریسی نظام جامعہ کی نئی عمارت میں منتقل کرنے کے لئے ایک افتتاحی دعا ئیہ نشست کا انعقاد کیا گیا، نشست میں کلیدی خطاب کرتے ہوئے مدرسہ اشرف المدارس ہردوئی کے شیخ الحدیث مولانا افضال الرحمٰن قاسمی نے تعلیم کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ نومولود بچے کے کان میں اذان و اقامت کا حکم اس بات کا ثبوت ہے کہ اسلام بچہ کو پیدائش سے ہی تعلیم سے مربوط کر دیتا ہے، کہ اللہ کی وحدانیت کو سمجھو، رسول اللہ کی رسالت کو جانو اور تمام اوامر میں جو سب سے اصل اور اہم رکن نماز ہے اس کے تمام مسائل کو جانو، اسی کے ساتھ والدین کی ذمہ داری ہے کہ بچہ کے کان میں جو پہلے بول پڑے ہیں اسی کے مطابق اس کی تربیت کریں۔ حضرت محی السنۃ رحمتہ اللہ علیہ کے دوسرے خلیفہ مولانا انعام احمد کاسگنج نے اپنے خطاب میں تعلیم و تربیت اور بالخصوص تعلیم نسواں کی اہمیت و افادیت پر روشنی ڈالی، مولانا نے کہا کہ ہماری بچیاں ہی نسل نو کی تربیت گاہ ہیں، مولانا علیم الدین سمدھن نے مولانا شمعون کی کاوشوں پر انہیں مبارک باد دیتے ہوئے ان کی خدمات کی ستائش کی، اس موقع پر مولانا محمد جنید قاسمی نے بھی خطاب کیا، مولانا محمد الیاس نے نظامت کے فرائض انجام دیئے اس موقع پرمولانا عبدالرقیب، مولانا مبین ، مولانا اسلم ، قاری شعیب ، قاری سہیل ، مولانا شمیم قاسمی،حافظ مبشر الحق ، حافظ محمد ذاکر، حافظ افسر ، حافظ گلویز، حافظ شبیر ، و دیگر لوگوں خاص موجود رہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے