تیرے حوصلوں کے سامنے نظام باطل لرزاٹھاہے

طفیل ندوی، ممبئی

آج میں مسکان اور ان تمام بہادربہنوں کی ہمت وجرات اور اس کی بیباکی کو کن الفاظ میں سلام پیش کروں ،یقینا آج جو ہمت وجرات کانظارہ دیکھاگیا اسے قلم لکھنےسے عاجزہے، الفاظ ولغت کی ڈ کشنریاں اپنی بےبسی کاشکوہ کررہی ہے،اہل ایمان کی سرد چنگاری شعلہ دارہوگئی ،اورنظام باطل کولرزادیاآج اللہ اکبر ! اس کے نعرے میں ایک عجیب غیرت تھی آوازمیں ایک قوت تھی ،اٹھتےہوئے ہاتھ میں وہ جذبہ تھا جس سے یہ اندازہ ہورہاتھا کہ یقینا آج ابابیل اپنی چونچوں میں کنکریاں لےکر نہیں آئیں گےنگر اللہ نے اس ہاتھ میں جو قوت رکھی ہے ، وہ اس سے کہیں زیادہ ہے،اسلئےتم ہمیں کمزورنہ سمجھو، میں اکیلی ہوں مگر ہمیں بےبس نہ تصورکرناکیوں کہ

ہم نےسیکھاہے اذان سحرسےیہ اصول
لوگ خوابیدہ ہی سہی ہم نے صدادینی ہے

اگرتمہیں اپنی طاقت پر، اپنی پشت پناہی حکومت پر غروروگھمنڈہے توہمیں اس سے کوئی سروکارنہیں ،لیکن یادرکھناہمارامقابلہ وقت کے فرعون ونمرود سے بھی ہواہے ، وقت کے ابوجہل وابولہب کو ہم نے ہی سبق سکھایا ہے،ہماری خاموشی اور صبرواستقامت کو کمزور مت سمجھنا ابھی بھی ہماری صف میں صفیہ ؓ جیسی بیباک اور سمیہ ؓ جیسی دین اسلام پر اپنی جان نچھاورکرنیوالی موجودہیں، اگراسلام پر ،ہماری شریعت پر ، ہمارے طورطریقے پر جب بھی ناپاک انگلیاں اٹھانےکی کوشش کی جائےگی وہ انگلیاں توڑدی جائےگی، یہ تمام جذبات اور ایمانی سرگرمیاںمسکان کیساتھ ان تمام بہنوں کےدلوں میں موجزن ہیں جو اس وقت کرٹانک کی سرزمین سےاسلامی شعائرکےتحفظات میں اپنی بیباکی کاثبوت پیش کررہی ہیں، اس میں کوئی شک نہیں کہ ہمارے وطن عزیز کا دستور اورجوآئین وقانون ہیں اس میں ہمیں مکمل آزادی دی ہیں یہ ہمارالباس ہے ، اورہمارےدل کی آوازہے ، اس میں ہماری حفاظت ہیں اسلئے ہماری شرعی حدود،اورآئین نےجوآزادی دی ہےاس میں مداخلت کرنے کی ہرگزکوشش نہ کی جائے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے