گناہوں سے حفاظت،روزے کی روح ہے

ازقلم: گلشن پروین، متعلمہ جامعہ امّ الہدی پرسونی مدہوبنی بہار

رمضان المبارک کا مہینہ بڑی فضیلت و اہمیت اور برکت و افتخار کا حامل ہے۔اس مبارک مہینے کو مسلمان کے لیےنیکی، تقرب الہٰی اور نجات یافتہ ہونے کے لیے مختص کیا گیا ہے،تاکہ باقی گیارہ مہینوں کی لاپرواہی ،دین سے دوری،عبادات سے غفلت،اور فرائض و واجبات سے سستی پر مسلمان سچی پکی توبہ کر کے قرب خداوندی حاصل کرلے۔اور خود کو اپنے پروردگار کی خوشنودی کے لائق بنا کر جنت کا مستحق بنا لے۔ یوں تو ہر عبادت کے بدلے جنت ہے۔نماز کے بدلےجنت،زکاة کے بدلے جنت،اچھے اخلاق کے بدلےجنت،ذکروتسبیح کے بدلے جنت،یتیم پر خرچ کرنے کے بدلے جنت،الغرض تمام نیکیوں کے بدلے جنت ہے۔لیکن روزہ کا بدل خود حق تعالٰی شانہ ہیں۔چنانچہ ایک حدیث قدسی میں اللّٰہ تعالٰی کا ارشاد ہے:کہ روزہ میرے لیے ہے،اور میں خود ہی اس کا بدلہ ہوں ۔لیکن یاد رکھیں روزہ بہت نازک عبادت ہے،جیسے ایک چھوٹے بچے کی حفاظت ایک ماں بہت ہی دھیان سے کرتی ہے ۔ اس سے بھی کئی گنا زیادہ مسلمان کو اپنے روزوں کی حفاظت کرنی چاہیے ۔ہر مسلمان کو یہ طے کر لینا چاہیے کہ ،اس بابرکت مہینے میں آنکھ،کان،ہاتھ،پاؤں،زبان،بلکہ جسم کا کوئی عضوگناہ میں ملوث نہ ہو۔جھوٹ، غیبت، چغل خوری، بدنظری اور تمام فضول کاموں سے خود کو دور رکھیں ۔یہ کیسی بات ہوئی کہ کھانا پینا اور جماع، جو حلال ہیں ان کوتوہم اللّٰہ کےڈرسےچھوڑدیں،لیکن جو حرام ہے جن کی وجہ سے روزہ کی برکتیں ختم ہوجاتی ہیں ان سے نہ بچا جائے۔افسوس ہے کہ رمضان کے مہینے میں گناہ کی مجلس لگا کر لوگوں کی غیبت کرنا عام سی بات ہو گئی ہے۔خصوصًا خواتینِ اسلام اس میں کثرت سے مبتلا ہیں ۔حدیث پاک میں ہے کہ ایک مرتبہ ہمارے نبی ﷺ جنّت اور جہنم کا حال دیکھنے گئے ۔تو جنت میں زیادہ مرد تھے اور جہنم میں زیادہ عورتیں تھیں ۔اس کی وجہ یہ تھی کہ مرد پورے دن محنت و مزدوری کر کے بچوں کا پیٹ بھرتا ہے ۔اور عورتیں عام طور پر رمضان المبارک کے مہینہ میں کثرت کے ساتھ غیبت اور بہتان تراشی کر کے اپنے روزوں کو خراب کر لیتی ہیں ۔اور انہیں اپنے روزوں کے خراب ہونے کا خیال تک نہیں ہوتا،حالاں کہ نبی پاکﷺکا ارشاد ہے کہ جو آدمی روزہ رکھتے ہوئےحرام کام کونہ چھوڑےگا،تواللّٰہ تعالٰی کواُس کےبھوکے پیاسے رہنےکی کوئی پرواہ نہیں۔یعنی روزہ کا اللّٰہ کی بارگاہ میں قبول ہونے کےلیےضروری ہےکہ آدمی کھاناپینا چھوڑنےکے علاوہ ،گناہوں کوبھی چھوڑ دے۔آخرمیں دعاءکرتی ہوں کہ اللّٰہ پاک ہم سب کوروزہ کی حفاظت کرنےوالابنادے،اورتمام گناہوں سے بچنے کی توفیق عطا فرمائیں۔ آمین

گناہوں کی عادت چھڑا میرے مولا
ہمیں نیک بندی بنا میرے مولا