بارہ بنکی: ضلع میں پہلی بار 72 تابوت کی زیارت کرنے کے لیے کربلا سول لائن میں عزاداروں نے دکھایا جوش و خروش

بارہ بنکی،(ابوشحمہ انصاری) انجمن گنچائے عباسیہ اور مومن بارہ بنکی کے زیر اہتمام قدیم تاری شبداری کا 22 واں (راؤنڈ) اپنے روایتی انداز میں اور ضلع میں پہلی بار 72 تابوت کی زیارت کرنے کیلۓ کربلا سول لائن میں عزاداروں نے جوش و خروش سے شرکت کی۔ شبداری کا آغاز مولانا ہلال عباس نے تلاوتے کلام پاک سے کیا۔ چھوٹے بچوں نے بھی اپنے کلام پیش کیے جس کے فوراً بعد مجلس شبداری کا آغاز حجۃ الاسلام والمسلمین عالی جناب مولانا معراج حیدر اعظمی نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ حضرت امام حسین علیہ السلام نے ہمیشہ حق اور سچ کی راہ پر چلنے کی تلقین کی ہے اور کبھی بھی باطل کے سامنے سر نہ جھکانا چاہیے۔ آخر میں انہوں نے کربلا کا درد ناک مصائب پیش کیا جسے سن کر عزادار بہت روئے۔ مجلس میں 72 تابوت زیارت کرواٸی گٸی۔ جنہیں قیصر نواب جونپوری نے اپنے منفرد انداز میں برآمد کیا۔ جس میں مقامی اور بیرونی حضرات نے شرکت کی۔ ضلع میں پہلی بار 72 تابوت کی زیارت کرنے کے لیے عزاداروں کا جن سیلاب ٹوٹ پڑا۔ پورے کربلا احاطے میں پہلی بار 72 تابوتوں کی زیارت کے لیے ہجوم جمع ہوا۔ جس کے بعد ملک کے مشہور و معروف انجمن دعائے زہرا کے نوحہ خان شبی عباس عارفی مظفر نگر نے اپنے نفیس انداز میں مصابی نوحہ سنایا جسے سن کر عزاداران شدید غم زدہ ہوئے۔ جس کے بعد بیروونی انجمن جنت الایمان کیسروہ سعادت اور انجمن پیغامِ حسینی زید پور اور مقامی انجمن نے مصرعے ترہ پر اپنا کلام پیش کیا۔ یہ شبداری صبح کی آذان تک چار بجے تک جاری رہی۔ انجمن کی جانب سے خواتین کے پردے کا انتظام کیا گیا، اور رات بھر چائے پانی اورنظرِ مولا کا انتظام کیا گیا۔ آخر میں انجمن گنچاٸےعباسیہ بارہ بنکی کے تمام ممبران اور کمیٹی و کنوینر نے شبداری اور 72 تابوت میں شرکت کرنے والے تمام حضرات کا شکریہ ادا کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے