جماعت اسلامی ہند کے سابق امیر کا انتقال ملت کا دینی خسارہ! محمد الیاس خان

(سنت کبیرنگر)

نئی روشنی میگزین برینیاں سنت
کبیرنگر کے ایڈیٹر سلمان کبیرنگری نے کہا کہ مولانا سید جلال الدین عمری سابق امیر جماعت اسلامی ہند اور آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے نائب صدر کی شخصیت اُن کی علمی اور دینی کاموں کی وجہ سے محتاج تعارف نہیں ہے۔ اُن کی علمی اور دینی خدمات کا دائرہ کئی دہائیوں پر پھیلا ہوا ہے ہے، آپ کے جانے سے تنظیم وجماعت اسلامی میں ایک خلا پیدا ہوگیا ہے، آپ کی شخصیت علمی وتنظیمی دنیا کی ایک ممتاز ومعروف شخصیت تھی،آپ کے اندر دینی حمیت کا جزبہ بھرپور پایا جاتا ہے –
وہیں معروف سماجی کارکن مشہور شخصیت ارسلان انٹر نیشنل اسکول کمھریا کے ڈائریکٹر محمد الیاس خان نے کہا کہ علاقے کے نامور علماء اور علاقے کے سیاسی و سماجی رہنماؤں نے سید جلال الدین عمری سابق امیر جماعت اسلامی ہند اور سابق نائب صدر آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے گہرے رنج و الم کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے انتقال کو بڑا علمی اور ملی خسارہ قرار دیا اور تعزیت مسنونہ پیش کی، انہوں نے کہا کہ سید جلال الدین عمری سابق امیر جماعت اسلامی ہند خوش فکر اور بہترین عالم دین تھے وہ تمام مسلک سے بالکل انگ ہوکر کام کرتے تھے
وہیں بصارت اسلامک فیکٹس حیدرآباد کے ایڈیٹر مفتی عبدالصمد قاسمی بستوی نے کہا کہ ایسے عالم میں کہ جب ائمہ کی زندگی کی جھلکیاںپیش کرنے والے علماء مفقود ہوں ایسے بزرگ و معلم سے محرومی نا قابل برداشت ہے۔ ایک عرصہ ختم ہو گیا، ایک نسل مٹ گئی۔
اللہ رحمت و مغفرت فرمائے! جوار رحمت میں بلند درجات عطا فرمائے! آمین