فیڈریشن آف مہاراشٹرا مسلمس نے کی شردھا کے بہیمانہ قتل کی مذمت اور جرم کو فرقہ وارانہ رنگ نہ دینے کی میڈیا سے اپیل

ممبئی:
فیڈریشن آف مہاراشٹر مسلمز (ایف ایم ایم) نے دہلی میں 27 سالہ شردھا واکر کے وحشیانہ قتل کی مذمت کی ۔ ایف ایم ایم نے اس قتل کی مکمل تحقیقات اور اہل خانہ کے ساتھ فوری انصاف کا مطالبہ کیا۔ بیان میں کہا گیا کہ ہمیں معاشرہ میں لڑکیوں اور خواتین کیخلاف گھریلو تشدد کو سنجیدگی سے لینا چاہیے، کوئی بھی لاپرواہی خطرناک ہوسکتی ہے اور اس قسم کے غیر انسانی واقعات کا باعث بن سکتی ہے۔

ہم گھریلو تشدد کے موضوع پر ماضی کا جائزہ لینے اور تحقیق کرنے پر بھی زور دیتے ہیں، کیونکہ "صرف قوانین” تشدد کی روک تھام میں ناکام ہو چکے ہیں ۔

ایف ایم ایم "لیو ان ریلیشن” کو قانونی قرار دینے کو بھی مسترد کرتی ہے اور اسے "خاندانی نظام کا تخریب کار” مانتی ہے جو ہماری تہذیب اور قوم کی بنیاد ہے ۔

ہم کچھ میڈیا رپورٹس میں مسلمانوں کی شبیہ بگاڑنے کی کوشش کی بھی یکساں مذمت کرتے ہیں جو واضح طور پر پولرائزنگ اور فرقہ وارانہ ہے۔ وہ شردھا کے بھیانک قتل کو فرقہ وارانہ رنگ دے رہے ہیں، جو اتنا ہی مجرمانہ ہے جتنا کسی کا قتل، اسے روکنے کی ضرورت ہے۔ اس طرح کا بیان فیڈریشن آف مہاراشٹرمسلمس کے ذمہ داران مولانا محمود دریا آبادی، فرید شیخ ،حافظ محمد اطہر، رضوان الرحمن خان ، آغا روح ظفر، مولانا ظہیر عباس رضوی ، مفتی محمد اشفاق عبدالحفیظ پترکار ، شاکر شیخ اور فیڈریشن کے کوآرڈینیٹر عبدالمجیب نے جوائنٹ پریس ریلیز میں دیا ہے۔

جاری کردہ
عبدالمجیب، کوآرڈینیٹر: فیڈریشن آف مہاراشٹر مسلمز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے