زمانہ بھیج رہا ہے تمہیں سلام حسین

منقبتِ امام سیِّدنا حسین علیہ السلام

مری نظرمیں یقینا ہو تم ہشام حسین
تمہارا کیوں نہ ہمیشہ رہوں غلام ، حسین!

دلوں پہ اہلِ جہاں کےہو حکمراں تم ہی
زمانہ بھیج رہا ہے تمہیں سلام حسین

خدا کے دین کامظہر ہواورسِر بھی تمہیں
بلند رب نےتمہارا کیا مقام حسین

نبی،علی کی شجاعت کےتم ہی ہووارث
ہوان کی آل میں لاریب تم سَنام حسین

قدم بڑھا کے چلے تھےیوں جانبِ مَشہد
جہاں نےتم سا نہیں دیکھاتیزگام حسین

بلاکےکوفہ جنہوں نےدغادیا،ان سے
بروزِحشر خدا لےگا انتقام حسین

نبی کا لختِ جگر،”فاطمہ“ کےبیٹےہو
تم اپنے چاہنے والوں کے ہوامام حسین

سیِّدعزیزالرحمٰن عاجز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے