جئے پور ممبئی ٹرین میں بےقصوروں پر گولی چلانے والے آر پی ایف کانسٹبل کو سزا دی جائے: مولانا مسعود احمد حسامی

ممبئی: 4 اگست
جمعیۃعلماء کے ایک وفد نےمولانا حافظ مسعود احمد حسامی صدر جمعیۃعلماءمہاراشٹر(ارشد مدنی) کی صدارت میں ضلع کلکٹرناگپور کو ایک مطالباتی میمورنڈم دیا جس میں تحریر ہے کہ جئے پور ممبئی ٹرین میں ویرار اسٹیشن کے پاس آر پی ایف پولس کانسٹبل چیتن سنگھ نے نفرت کی بنیاد پر جان بوجھ کر اندھا دھن فائرنگ کر کے چار بے قصوروں کو جان سے ماردیا جس میں تین باشرع مسلمان اور ایک پولس افسر ہے ۔ میمورنڈم میں مزید تحریر ہے کہ فائرنگ کرتے وقت مذہبی منافرت سے پُر اور متشدد باتیں بھی قاتل نے کہیں جس کاسوشل میڈیا پر ویڈیو کی شکل میں موجود ہے۔
جئے پور ممبئی ٹرین میں ڈیوٹی پر مامور آر پی ایف کانسٹبل کی جانب سے چار بے قصوروں کو چلتی ٹرین میں گولی چلانے والے واقع پر اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے جمعیۃ علماء مہاراشٹر(ارشد مدنی)کے صدرمولانا حافظ مسعود احمد حسامی نے کہا کہ حالیہ دنوں میں نفرت اپنی انتہا کو پہنچ چکی ہے ۔اس لئے اس واقہ کو انجام دینے والے کانسٹبل کو عبرت ناک سزا دی جائے تاکہ مستقبل میں اس طرح کے واقعات انجام دینے کی کوئی جرأت نہ کرسکے۔اس مقدکی کی سماعت فاسٹ ٹریک عدالت میںکرائی جائے اور جتنی جلد ہوسکے قاتل چیتن سنگھ کو سخت سے سخت مثالی سزا دی جائےتاکہ مستقبل میں ایسے واقعات سے بچا جاسکے۔
حافظ مسعود نے مزید کہا کہ ماب لنچنگ، گئو رکشا کے نام پر مسلمانوں کو زدوکوب کرنا عام ہوتاجارہا ہے اورسپریم کورٹ کی سخت ہدایتوںکے باوجود پولس مشنری خاطیوں پر قابوپانے میں ناکام ثابت ہورہی ہے اور اگر ایسا ہی چلتارہا تو ہندوستان میں اقلیتوں کا جینامشکل ہوجائے گا لہذا پولس مشنری کو قانون ہاتھ میں لینے والوں کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کرنا چاہئے ۔
عتیق قریشی (سکریٹری جمعیۃعلماء ضلع ناگپور )نے کہا کہہ ایسے گنگی ذہنیت رکھنے والوں کی وجہ سے ملک کی شبیہ خراب ہوتی ہے ،جمعیۃعلماء اس کی بھر پور مذمت کرتی ہے۔
اس وفد میں مولانا حافظ مسعود احمد حسامی (صدر جمعیۃعلماء مہاراشٹر) عتیق قریشی (سکریٹری جمعیۃ علماء ضلع ناگپور)بلال انصاری ،جاوید اختر (جنرل سکریٹری جمعیۃعلماء ضلع ناگپور) زبیر کبیر، سراج احمد (سابق نگر سیوک)محمد مشتاق انصاری(نائب صدر جمعیۃ علماء ضلع ناگپور) محمد الیاس،ڈاکٹر ماجد انصاری،مختار انصاری،ابو ہاشم،محمد مشتاق انصاری،شارق جمال وغیرہ شامل تھے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے