لیڈر اور پاور

  • قائد کی 8 اقسام، قوت کی اٹھائیس کیٹیگریز جو ہمیں حاصل ہوسکتی ہیں
  • مشن تقویتِ امت قسط 29

مختلف پہلوؤں کی بنیاد پر قیادت کے مختلف طریقے اور انداز ہو سکتے ہیں لیکن ہم یہاں آٹھ طریقوں کا تذکرہ کرتے ہیں:
1 خود مختار قیادت (autocratic): لیڈر ہر فیصلے کا اختیار اپنے پاس رکھتا ہے اور اس عمل میں دوسروں کو شامل نہیں کرتا۔ وہ اپنے طور پر فیصلے کرکے ماتحتوں سے ان ہدایات پر عمل کرنے کی توقع رکھتا ہے۔
2 جمہوری قیادت (democratic): جسے شریک کنندہ (participative) قیادت کے نام سے بھی جانا جاتا ہے: اس کا حامل فیصلہ سازی کے عمل میں جماعت کے ارکان کو شامل کرتا ہے اور باہمی تعاون کو فروغ دینے والا ماحول بنانے کے لیے اجتماعی معاملات میں فیصلہ سازی سے پہلے اپنی ٹیم سے مشورے لیتا ہے۔
3 تبدیلی لانے والی (transformational) قیادت: ایسا قائد اعلیٰ درجے کی کارکردگی حاصل کرنے کے لیے اپنی جماعت کے ارکان کی حوصلہ افزائی کرتا ہے اور مشترکہ وژن بنانے، تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے اور اپنی ٹیم کے ہر فرد کی ذاتی ترقی اور ان میں مثبت تبدیلی لانے پر (پرسنل گروتھ) پر توجہ مرکوز کرتا ہے تاکہ فرد کی تبدیلی اجتماعی تبدیلی کا پیش خیمہ بن سکے۔
4 ٹرانزیکشنل (transactional) (جزا و سزا پر مبنی) لیڈرشپ: ٹرانزیکشنل لیڈر اپنی جماعت کی حوصلہ افزائی کے لیے انعامات اور سزائیں دینے کا طریقہ اپناتا ہے۔ اچھا کام کریں گے تو انعام ملے گا نہیں کریں گے تو سزا ملے گی۔ ایسا لیڈر پہلے سے طے شدہ اہداف کی تکمیل اور متعین کردہ طریقہ کار کی پیروی پر زور دیتا ہے۔
5 خادم (servant) لیڈر شپ: خادم لیڈر اپنی جماعت کے ممبران کی بھلائی اور ترقی کو ترجیح دیتا ہے۔ وہ اپنی ٹیم کی ضروریات کو پورا کرنے اور ان میں موجود خوابیدہ صلاحیتوں کو بیدار کرنے کے لیے اپنے تن من دھن کی بازی لگا دیتا ہے۔
6 عدم مداخلت والی قیادت (Laissez-Fare Leadership): ایسا لیڈر ہر چیز میں خود سے رہنمائی کرنے کے بجائے جماعت کے اراکین کو زیادہ تر فیصلے خود کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ یہ طریقہ ان حالات میں بہت کارآمد ہو سکتا ہے جہاں جماعت کے ارکان انتہائی ہنر مند اور با حوصلہ ہوں۔
7کرشماتی (charismatic) قیادت: کرشماتی رہنما مقناطیسی شخصیت کا حامل ہوتا ہے اور وہ اپنے سحر، سرگرمی، غیر معمولی صلاحیت اور توانائی کے ذریعے اپنی جماعت کو متاثر کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور اکثر ان کے ساتھ ایک مضبوط جذباتی تعلق پیدا کرنے میں کامیاب ہوجاتا ہے۔
8 ضابطہ پرست (bureaucratic) قیادت: بیوروکریٹک لیڈر قائم کردہ قواعد، ضابطوں، طریقوں اور پروٹوکول پر سختی سے عمل کرتا ہے۔ وہ مستقل مزاجی، منظم انداز، اور پالیسیوں کی پابندی کو ترجیح دیتا ہے۔
یاد رکھیں کہ قیادت کے مختلف طریقوں سے چند صفات و خصوصیات کو اٹھاکر یکجا بھی کیا جاسکتا ہے۔ موثر رہنما اور قائد وہ ہوتا ہے جو حالات، اپنی جماعت کی ضروریات، ذاتی صلاحیتوں اور ترجیحات کے لحاظ سے قیادت کے مختلف طریقے اپنائے۔
یہ تو بات ہوئی کہ ہم کس قسم کے لیڈر بن سکتے ہیں
اب سوال یہ ہے کہ کون سی قوتیں ہمارے پاس ہونی چاہئیں جن کو حاصل کرکے ہم لیڈر بن سکیں؟
جماعت کے ہر فرد کے پاس موجود قوتوں کی شناخت کیسے کی جائے تاکہ ان کا صحیح استعمال کیا جاسکے؟ یا ان قوتوں سے انہیں لیس کیا جاسکے؟
اور اس کا بھی دھیان رکھا جاسکے کہ کسی میں اتنی زیادہ قوتیں نہ جمع ہوجائیں کہ وہ قائد کے خلاف ہی بغاوت یا اندرون جماعت شورش برپا کر بیٹھے؟ آئیے اب تھوڑا طاقت کی مختلف اقسام پر غور کرلیتے ہیں؟
طاقت کی اقسام
طاقت سے ہماری مراد ہر وہ فطری یا محنت سے حاصل شده صلاحیت و مہارت، صفت و خصوصیت، ٹیلنٹ اور ہنر ہے جس کے ذریعے ہم کسی پر اثر انداز ہوسکیں یا جس سے ہم متاثر ہوسکیں
اگر ہر قوت کو گننا شروع کریں تو کم از دو سو سے پانچ سو تک تعداد نکل آئے گی لیکن ہم صرف ان تفصیلی قوتوں کی اجمالی کیٹیگریز پر اکتفا کرتے ہیں:
1 جسمانی قوت: صحت مند ایتھلیٹ باڈی ہونا، چہرے اور آنکھوں کا خوبصورت اور پرکشش ہونا، مختلف گیمز کا ماہر ہونا، تیز دوڑنے کی صلاحیت، حواس خمسہ کا اعلی ہونا، کراٹے وغیرہ۔
2 معلوماتی: لوگوں کو درپیش ہر قسم کی معلومات قوت ہیں، ڈیٹا اکٹھا کرنا، ڈیٹا پیش کرنا، معلومات کو انکوڈ اور ڈیکوڈ کرنا، ان کی چھان بین، تجزیہ اور صحیح اور غلط معلومات کے درمیان امتیاز پیدا کرنا، ان کے درمیان ربط پیدا کرنا، سائنسی علوم میں مہارت، تاریخ جاننا وغیرہ وغیرہ
3 ذہنی: تنقیدی و تجزیاتی فکر، پرابلم کا سولوشن نکالنا، زود آموزی، مسائل کی شناخت، وجدانی قوت، قوت حافظہ، قوت تصور، فلسفیانہ حکمت، کئی زبانوں پر عبور، حسابی تصورات میں پختگی، عقلی بحث کے ذریعے کسی کا نظریہ بدلنے اور متاثر کرنے کی صلاحیت
4 نفسیاتی: اسٹریس مینجمنٹ، مردم شناسی، لاشعور کو استعمال کرنے اور اس کو بدلنے کی صلاحیت، لوگوں کی نفسیات کو سمجھ کر اس کے مطابق ان سے بات کرنے اور متاثر کرنا۔
5-6 جذباتی و اخلاقی: احساس ہمدردی، جذبات کو سمجھنا اور استعمال کرنا، خود نظمی، خود اعتمادی، پر امید ہونا، ہمت و بہادری، عجز و انکساری، معاف کرنا، مثبت رویہ، داخلی سکون، صبر و شکر
7 تخلیقاتی: نئے تصورات و تحقیقات پیش کرنا، نئے انداز میں سوچنا، نئی تخلیقات منظر عام پر لانا، تصورات کو حقیقت میں بدل دینا، بیانئے تخلیق کرنا،
8 تکنیکی: روبوٹکس، ہیکنگ، مشین لرننگ، مصنوعی ذہانت،گرافک ڈیزائننگ، کمپیوٹر اور پروگرامنگ لینگویج میں مہارت، کوڈنگ کی مہارت
9 قائدانہ: فیصلہ سازی کی قوت، negotiation گفت و شنید کا ہنر، ہائی پریشر حالات میں مؤثر فیصلے لینا (crisis management)، حکمت عملی تیار کرنا، آپسی تنازعات کو سلجھانا، ساحرانہ گفتگو، مضبوط ٹیم تیار ک رنا، وژنری قیادت، جذباتی کنٹرول
10 لسانی و مواصلاتی: پبلک اسپیکنگ، مؤثر اظہار خیال کی قوت، ترغیبی صلاحیت، صحیح ترجمانی کرنا، اپنی باتوں کے ذریعے لوگوں سے گہرے تعلقات پیدا کرلینا، مسحور کن آواز کا مالک ہونا، متاثر کن باڈی لینگویج اور اس کے ذریعے کسی کے عادات و اطوار کو بھانپ لینا، نظامت، میڈیا میں گفتگو اور اینکرنگ کی صلاحیت، قصہ و داستان گوئی کی صلاحیت
11 فنکارانہ: چیزوں کو خوبصورت انداز میں پیش کرنے کی مہارت، تصورات کو مجسم شکل دینا، بہترین انداز میں نعت پڑھنا، ڈیزائن کرنا، فوٹوگرافی اسکلز، فیشن سینس، اداکاری، طباخی
12 ادبی: شعر و شاعری، تصنیف، مضمون و مقالہ نگاری کی قابلیت
13 درسی و تدریسی: عمدہ پڑھانا، نصاب تیار کرنا، طلبا کے اندر موجود خوابیدہ صلاحیتوں کو بیدار کرنا، بچوں کو علمی کاموں میں مشغول رکھنا، کوچنگ اور ٹریننگ، جائزہ اور اسیسمنٹ لینا، نظام تعلیم تیار کرنا، صلاحیت شناسی و مردم شناسی، مردم سازی
14 ماحولیاتی: ماحولیاتی ایکٹیوزم، ماحولیات کو تحفظ فراہم کرنے والی مہارت، آلودگی کم کرنا، گرین ٹکنالوجی تیار کرنا، قدرتی ذخائر کا انتظام و انصرام، کچرے کو ختم اور کم کرنے کی حکمت عملی، قابل تجدید انرجی کو ڈھونڈ کر استعمال میں لانا، کم زمین میں کثیر مقدار اور پائیدار زراعت کرنا
15-16 سیاسی و سماجی: نیٹ ورکنگ، ٹیم بنانا، ٹیم کے درمیان باہمی تعاون کا ماحول بنائے رکھنا، انٹرپرسنل اسکلز، فنڈ اکٹھا کرنے کی صلاحیت، رضاکارانہ کام کرنا اور اس کے لیے لوگوں کو تیار کرنا، سماجی انصاف دلانے کی جد و جہد، نوجوانوں کو تعلیم، حوصلہ اور جاب دلانے والے پروگرام کرنا، غربت کے خاتمے کی کوشش کرنا، قدرتی آفات کے وقت ریلیف کا کام کرنا
17 ثقافتی: اپنے ثقافتی ورثے کی حفاظت کرنا، ثقافتی شناخت کو برقرار رکھنا
18 وسائلی: مال کی فراوانی، غذائی کھیتوں کا مالک ہونا، ذرائع نقل و حمل کا مالک ہونا، مختلف میدانوں کی کمپنیز کا مالک ہونا، زمین و جائیداد کا ہونا
19 انتظامی: پروجیکٹ مینجمنٹ، تنظیمی مہارت، اسٹریٹیجی کا انتظام، آپریشن مینجمنٹ، تبدیلی کا انتظام، انسانی وسائل کا انتظام، کوالٹی مینجمنٹ، رسک مینجمنٹ
20 عہدہ: ہر وہ عہدہ جس کو سماج میں عزت کی نظروں سے دیکھا جاتا ہے
21 تعلقات: تعلقات کا مضبوط ہونا اپنے آپ میں ایک طاقت ہے کیوں کہ اس کے ذریعے مہینوں اور سالوں کے کام منٹوں اور گھنٹوں میں نکالے جاسکتے ہیں
22 رشتہ داری: جب کوئی اس بنا پر اثر و رسوخ رکھتا ہے کہ وہ ایک بااثر شخص کا رشتے دار ہے۔
23 نسلی و خاندانی: جب نسلی طور پر سماج میں کسی کو تفوق و برتری حاصل ہو، یہ قوت لوگوں کو متاثر کرنے میں بہت اہم رول ادا کرتی ہے
24 تجربہ و مہارت: جب ماضی کے تجربے کی بنیاد پر کسی پر بھروسہ کیا جاتا ہے یا اسے قابل اعتبار سمجھا جاتا ہے۔
25 انعام: جب کوئی آپ کو وہ انعام دے سکتا ہے جس کی آپ کو ضرورت ہے۔
26 دباؤ یا زبردستی: اگر آپ اس کی مرضی کا کام نہیں کرتے ہیں تو وہ آپ کے لیے مسائل پیدا کر سکتا ہے
27 ماورائی: ٹیلی پیتھی، ہپناٹزم، قوتِ تصرف، لطائف ستہ کی بیداری، جنات کو قابو میں کرنا، علم الاعداد و النجوم
28 ایمانی و روحانی: اللہ پر یقین کا مضبوط ہونا، توکل علی اللہ، اوامر شریعت اور اعمال شریعت کی پابندی اور نواہی شریعت سے احتراز
احصاء کا تو دعویٰ نہیں البتہ انسانوں میں انفرادی اور اجتماعی طور پائی جانے والی کسبی اور غیر کسبی قوتوں کی کیٹیگریز کو ہم نے یہاں ذکر کرنے کی پوری کوشش کی ہے تاکہ "و اعدوا لھم ما استطعتم من قوۃ” پر عمل کے لیے میدان میں اترنے سے پہلے ہمارے سامنے امکانی قوتیں مستحضر ہوں تاکہ ہم ایک جامع لائحۂ عمل تیار کرنے کے ساتھ ساتھ اپنا محاسبہ بھی کرسکیں کہ کتنی قوتیں ہم نے اپنے اور اپنی جماعت کے اندر پیدا کرلی ہیں اور کتنی باقی ہیں
آپ مزید اضافہ کرکے ہماری راہنمائی کرسکتے ہیں

تحریر: قیام الدین قاسمی، سیتامڑھی
خادم مشن تقویتِ امت
7070552322
qiyam308@gmail.com

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے