ہوئیں جس پہ تیری نوازشیں وہ بہار بن کے سنور گیا

یہ دنیا بنی نوع انسانی کےلیے دارالامتحان ہے، اس دنیا میں ہر انسان آتا اور ایک متعینہ وقت تک اپنی زندگی گزارتا ہے، اور پھر اس عالمِ فانی سے کوچ کرکے ابد الآباد والی زندگی گزارنے کےلیے اپنے ربِ کریم کے پاس چلا جاتا ہے

گلبانگِ سحر بن جاتی ہے ساون کی اندھیری رات یہاں

دارالعلوم دیوبند نے مسلمانوں کی فکر و نظر کو تازگی و پاکیزگی، قلب کو عزم و حوصلہ اور جسم کو قوت و توانائی بخشنے میں بڑا کام کیا ہے۔ اس کا فیضان عام ہے ، اس سے ایسے بے شمار لوگوں نے اپنی علمی تشنگی بجھائی ہے ، جن کے علمی شوق کو پورا کرنے کے لیے اسباب مہیا نہ تھے۔